Admin

اعتراف کا لمحہ


محبت اور عزت نفس کا آپس میں بڑا گہرا تعلق ہوتا ہے۔محبت سب سے پہلے عزت نفس کو ختم کردیتی ہے....یا بندہ محبت کرلے....یا پھر اپنی عزت...ہاتھ کی مٹھی میں دونوں چیزیں اکٹھی نہیں آسکتیں۔
اپنے کمرے میں آنے کے بعد وہ کچھ ایسا ہی محسوس کررہی تھی۔۔اسے یک دم بہت زیادہ تھکن کا احساس ہورہا تھا۔
” ”کیا میں نے ٹھیک کیا ہے؟"کھڑکی کے پردے ہٹاتے ہوئے اس نے باہر پھیلی تاریکی میں جھانکتے ہوئے سوچا۔
”کیا خود کو اس قدر گرا دینا ٹھیک ہے؟"وہ اب سینے پر بازو لپیٹے سوچ رہی تھی۔”یہ جاننے کے باوجود کے عمر اور جوڈتھ....پھر آخر میں اپنے لیئے کس رول کو انتخاب کرنا چاہ رہی ہوں؟"اس نے اپنے ہونٹ بھینچ لیئے۔”یہ جاننے کے باوجود کہ عمر شائد کبھی بھی مجھ میں شادی کے لیئے انٹرسٹڈ نہیں رہا۔میں اس سے پھر بھی یہ تعلق کیوں قائم کرنا چاہتی ہوں۔"اس نے ایک گہرا سانس لیا۔”آخر عمر ہی کیوں...."وہ خود کو بے حد بےبس محسوس کررہی تھی۔”شاید میں ابھی بھی میچیور نہیں ہوئی ہوں....شاید میں کبھی بھی میچیور نہیں ہوسکتی .....یا پھر عمر جہانگیر وہ حد ہے جہاں میری میچیورٹی ختم ہوجاتی ہے۔میرے حواس خمسہ کام کرنا چھوڑ دیتے ہیں....پھر میں صرف وہ دیکھتی ہوں‘وہ سنتی‘اور وہ کہتی ہوں جو اس کی خواہش ہوتی ہے.....کیا اسی کیفیت کو محبت کہتے ہیں۔"
اسے اپنی آنکھیں دھندلی ہوتی محسوس ہوئیں۔
اعتراف کا لمحہ عزاب کا لمحہ ہوتا ہے

امربیل از عمیرہ احمد

Heer
علم اور وجدان کی سوچ
سوچ دو طرح کی ہوتی ہے، ایک سوچ علم سے نکلتی ہے اور ریگستان میں جا کر سوکھتی ہے۔ دوسری سوچ وجدان سے جنم لیتی ہے اور باغ کے دہانے
پر لے جاتی ہے۔
ان ہی دو قسم کے خیالات سے دو طرح کا رہنا سہنا جنم لیتا ہے۔ ایک رہنا سہنا علم اور تجویز سے جنم لیتا ہے، اس میں چاقو، چھری، مقدمہ، بحث مباحثے، کس بل، حق حقوق، چھینا جھپٹی، کرودھ، کام، ہنکار سب ہوتا ہے۔ دوسرا رہنا سہناایک اور قسم کی سوچ سے نکلتا ہے۔ اس میں وجدان، شانتی، امن، پرسچت، پریم کی وجہ سے ہمیشہ ہجرت کا سماں رہتا ہے۔ اسی وجدان کی وجہ سے ایسی سوچ والے لوگ غریبی میں امیر اور امیری میں غریب دکھائی دیتے ہیں۔
Heer
kisi ko chahne ka ihsaas zindagi ko roshni se bhar deta hai jis k har rang me nayi umeed chupi rehti hai aur jahan umeed ho wahan dard ka kya kaam ise mohabat kehte hain.
Ishq mohabat ki inteha hai jis ki justajoo har koi nhi kar sakta
ye wo aag hai jo har bhati me nhi sulgayi ja sakti. Ishq hasil ka nhi lahasil ka junoon hai khawahish e natamam hai ishq ka janam hi judai ki kokh se hota hai aur bhala judai rahat de sakti hai judai to dard deti hai aur jab ye dard laho ban k jism me behta hai to phr koi umeed baqi nhi rehti.
Ishq wo aag hai wo jalaye to rakh nhi karta fanaa kar deta hai
(ISHQ- E -AATISH)
Heer
Aap muhabbat zarror karien,Maghar muhabbat kay hasool ki itni khawish na karein.

Aap kay muqadar main jo chez hoo gee woh app ko mill jayee gee,
Magar kisi khawish ko kayee bana kar apnay wajood par phelnay mat dain warna yeh sab say philay app kay IMAAN ko niglay gee.

Pershan honay,Ratoon ko jagna aur saraboon kay pichay baghnay say kisi chez ko muqadar nahi banya ja sakta." 


Novel: Meri Zaat Zara-e-Be'Nishaan Written by: Umera Ahmed
Heer
Duniya kay bazaar mai Sheeraz nay apna zameer baicha tha....Uss nay apna sab say mehanga asaasa sab say "sasta" samajh kar diya tha...Ussay "zameer"k badlay "laakhon" milay....Yeh daam Sheeraz ko accha soda laga....Duniya kay bazar mai Zaini nay apni "Hayaa" rakh di thi....Uss nay apnay sab say qeemti asaasay ko "qeemti" samajh kar hi diya tha...Ussay "haya" k badlay "karoron" milay.....Jo bhi daa...m milay woh Zaini ko hamesha ghaatay ka soda hi laga.
Aansoo ab kia thamtay....Pachtawa ab kia jata....Uss raat woh saari naseehatain ussay yaad aati raheen jo sab ussay kartay rahay thay aur jinhain sun'nay per woh tayyar nahi thi.
"Woh "Haraam Rizq" ko "Man-o-Salwa" samajh kar kha raha hai usay janay do Zaini....Uss kay muqaddar mai Haraam khana hai...."Man-o-Salwa" nahi hai uss ki qismat mai."Uss kay baap nay uss say kaha tha.....Uss kay baap ko kia pata tha kay "Man-o-Salwa" tu Zaini k muqaddar mai bhi bahi tha...Sheeraz apni wajoohat ki wajah say pesay k peechay gaya tha....Woh apni wajhoohat ki wajah say....
"Jo cheez Allah nay dai Zaini ussay Insaanon say nahi maangna chahiye....Warna Insaan bara khuwar hota hai."Maan baap ki baatain itni dair say samajh mai kiun aati hain?


Man-o-Salwa se Iqtibas, By Umera Ahmad.